737

پاکستان اوربھارت کے درمیان ایٹمی جنگ ہوگی ۔۔۔سال بھی بتادیاگیا۔۔اب تک کی سب سے خطرناک خبرآگئی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے اوریا مقبول جان نے کہا کہ امریکہ نے 1977ء میں ایک نیشنل انٹیلی جنس کونسل بنائی تھی۔ یہ باڈی ہر سال مختلف ممالک سےانٹیلی جنس رپورٹ اکٹھی کر کے ایک انٹیلی جنس رپورٹس مرتب کرتی ہے کہ دنیا بھر میں کیا ہونے والا ہے اور امریکہ کو کیا کرنا چاہئیے؟ امریکی صدر کے

سامنے ایسی ہی ایک رپورٹ رکھی جاتی ہے ، ٹرمپ کو جو لوگ بے وقوف سمجھتے ہیں میں ان کو بتا دوں کہ ٹرمپ بھولا اور بے وقوف نہیں ہے ۔امریکہ کو ایک ایسا آدمی چاہئیے تھا جو ان کی گائیڈ لائن پر چلے۔ انٹیلی جنس ایجنسی کی رپورٹ میں کہا گیا کہ پاکستان اور بھارت کے مابین 2028میں ایک نیوکلئیر وار ہو گی، جبکہ اس سے قبل 2020 میں ہی امریکہ ریٹائرمنٹ لے لے گا اور اپنے کام سے کام رکھے گا۔ اوریا مقبول جان نے بتایا کہ یہ رپورٹ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو چوبیس جنوری 2017کو دی گئی۔جس میں کہا گیا کہ آئندہ تین سے چار سالوں میں امریکی کے حالات عجیب ہو جائیں گے، جس کے تحت امریکہ زیادہ پر زیادہ نہیں پھیلا سکے گا اورعالمی معاملات سے دور ہو جائے گا۔ لہٰذا امریکہ کو اپنے دشمن مار دینے چاہئیں ۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ آنے واکے کچھ سالوں میں پاکستان اور بھارت کی جنگ پانی پر ہو گی ، پاکستان اور انڈیا دونوں سندھ طاس معاہدے پر کئی سالوں سے عملدرآمد کر رہے ہیں لیکن اب گذشتہ تین چار سال سے یہ معاہدہ ختم ہو چکا ہے۔
پاکستان کو دو چیزوں سے تباہ کیا جا سکتا ہے ایک ڈرون حملے اور دوسرا اگر پاکستان کو

معاشی طور پرتباہ کر دیا جائے۔ اسی لیے پاکستان میں ایسی حکومت بٹھا دی گئی جس نے ملک و قوم کو قرضوں میں جکڑ دیا۔ اب ہو گا یہ کہ ہمیں مزید دھمکیاں ہمیں دی جائیں گی۔ اوریا مقبول جان نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں:

Comments

comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں